نیکلس کی کہانی

نیکلس کی کہانی

pearl necklace

یہ نیکلس اور اس کی کہانی بہت دلچسپ ہے، یہ نیکلس ترکی کے وزیرِاعظم طیب اردگان نے اپنی اہلیہ ایمن اردگان کو 4 جولائی 1979 کو شادی کی پہلی سالگرہ پر دیا تھا اور یہ ایمن اردگان کی زندگی کا سب سے قیمتی تحفہ تھا اور یہ نیکلس کو ہفتے کے سات دن اور دن کے چوبیس گھنٹے پہنے رکھتی تھیں اور ان کا خیال تھا کہ سہاگ کی یہ نشانی آخری وقت تک ان کے ساتھ رہے گی۔
عورتیں زیوروں سے اتنی محبت کیوں کرتی ہیں؟ یہ دنیا کے دس بڑے سوالوں میں سے ایک سوال ہے اور سوشیالوجی کے پروفیسر آج تک اس کا کوئی جواب تلاش نہیں کر سکے، ریورات شاید محبت کی نشانی ہوتے ہیں اور محبت عورت کا سب سے بڑا اثاثہ ہوتی ہے اور جس طرح سیپ بارش کےموتیوں کو اپنے وجود کا حصہ بنا لیتی ہے بالکل اسی طرح عورتیں محبت کے احساس، محبت کے لمحوں کو اپنے وجود، اپنی روح کی انتہائی خفیہ تجوریوں میں محفوظ کر لیتی ہیں اور پوری زندگی کسی دوسرے کو کانوں کان خبر نہیں ہونے دیتیں اور جب انہیں تنہائی ملتی ہے اور ان کے دائیں بائیں، آس پاس کوئی نہیں ہوتا تو یہ لالچی بنیے کی طرح آگے پیچھے دیکھ کر اپنی تجوری کھولتی ہیں، محبت کے لمحوں، گزرے ہوئے کل کے اس احساس کو گنتی رہتی ہیں اور زیور ان لمحوں، ان احساسات کا، فرنٹ ڈیسک ہوتے ہیں۔ یہ عورتوں کے دلوں، عورت کے احساسات کی تجوریوں میں چھپے خزانوں کا دروازہ ہوتے ہیں اور یہ انہیں گلے، کانوں، ناک اور ہاتھوں میں پہن کر پوری زندگی خوشی خوشی گزار دیتی ہیں۔
پڑھناجاری رکھئے۔۔۔